پہلے سکھ سینیٹر کے منتخب ہونے سے تاریخ رقم ہوئی
مانسہرہ کے شاندار گردوارے کو بحال کرنے کے منصوبے جاری ہیں
مئی 5, 2021

پہلے سکھ سینیٹر کے منتخب ہونے سے تاریخ رقم ہوئی

ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ ایسا ہوا ہے کہ سکھ برادری میں سے کوئی فرد سینیٹر منتخب ہوا ہے۔

وہ ضلع شانگلہ میں پیدا ہوئے اور میٹرک تک اپنی بنیادی تعلیم مکمل کرنے کے بعد، انہوں نے 2005 میں اقلیتوں کی نشست پر یونین کونسل کا الیکشن لڑا اور اس کے بعد کامیابی حاصل کی۔ سنگھ ایک دکان کا مالک ہے اور مینگورہ، سوات میں ٹرانسپورٹ کا کاروبار چلاتا ہے۔

انہوں نے اپنی اہلیہ کو خواتین ووٹرز کی حمایت کے حصول کا کریڈٹ دیا لیکن انہوں نے مزید کہا کہ وہ اپنی مہموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ نہیں لیتیں کیونکہ یہ ’پختون کلچر کے خلاف ہے‘۔ انہوں نے مزید کہا، ”میرے دونوں بیٹے سیاست میں آنے کے خواہشمند ہیں لیکن وہ اس وقت نابالغ ہیں۔” انہوں نے وضاحت کرتے ہوئے کہا، ”پنجابی زبان ہماری پہچان ہے لیکن میں اور میرا خاندان سبھی پشتو بولتے ہیں حالانکہ ہماری مادری زبان ہندکو ہے کیونکہ یہی زبان مالا کنڈ ڈویژن میں اکثریت بولتی ہے۔

اپنی حالیہ فتح کے بارے میں بات کرتے ہوئے، سنگھ نے بتایا کہ ان کی پارٹی – پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ایوان میں 102 ووٹ تھے جبکہ سنگھ کو 103 ووٹ ملے تھے – اضافی ووٹ رنجیت سنگھ کا تھا جو ان کے خلاف مقابلہ کررہا تھا۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ ”وہ ایک دوست ہے اور مجھے ووٹ دینے کے لئے میں ان کا ممنوں ہوں۔”

انہوں نے کہا، ”یونین کونسلوں کے انتخابات سے لے کر سینیٹ تک، میرے مسلمان بھائیوں نے ہمیشہ میری حمایت کی ہے اور مجھے فتح یاب بنایا ہے،” انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اقلیتوں کے لئے بھی اتنا ہی گھر ہے جتنا کہ یہ مسلم اکثریت کے لئے ہے۔ انہوں نے ملک میں بین المذاہب ہم آہنگی کی تعریف کی۔

پارلیمنٹ کے ایوان بالا میں سکھ قانون ساز کا داخلہ اس بات کا ثبوت ہے کہ ملک میں اقلیتوں کو نظرانداز نہیں کیا جاتا ہے، انہوں نے بتایا اور مزید ثبوت کے طور پر پنجاب میں کرتار پور راہداری کے افتتاح کی مثال دی۔

اب سینیٹر منتخب ہونے کے بعد، سنگھ نے مذہبی شناخت سے قطع نظر انسانیت کی فلاح کے لئے کام کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔

”میر ی زندگی کے 42 سالوں میں میرے بڑوں نے مجھے دوسروں کی مدد کرنا سکھایا ہے، کاروبار ہو یا سیاست میں یہی کام جاری رکھنا چاہتا ہوں۔”

Category: پہلا کے پی |

Comments

All comments will be moderated, and comments deemed uninformative or inappropriate may not be published. Comments posted herein do not in any way reflect the views and opinions of the Network.

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے